ذہنی صحت سے متعلق ہدایات

coronavirus information

گھر پر رہتے ہوئے اپنی ذہنی صحت اور تندرستی کا خیال رکھیں

ہم میں سے بہت سے لوگ گھر پر بہت زیادہ وقت گزاریں گے اور ہمارے لیے ہماری کئی ایک روز مرہ سماجی سرگرمیاں دستیاب نہ ہوں گی۔

اپنی زندگی میں اس دور کو ایک مختلف حیثیت سے دیکھنے کی کوشش مدد گار ثابت ہو گی؛ خواہ آپ نے اس کو منتخب نہیں بھی کیا تو یہ ضروری نہیں کہ یہ برا ہو۔

قیاس آرائیوں سے اجتناب کی کوشش کریں اور وباء کے پھیلاؤ سے متعلق شہرت یافتہ ذرائع تلاش کریں

افواہیں اور قیاس آرائیاں اضطراب میں اضافہ کر سکتی ہیں۔ وائرس کے بارے میں اچھے معیار کی معلومات تک رسائی آپ کی طرف سے اس پر قابو پانے کے احساس میں زیادہ مدد دے سکتی ہے۔

حفظان صحت کے مشوروں پر عمل کریں جیسا کہ اپنے ہاتھوں کو معمول سے زیادہ کثرت سے صابن اور گرم پانی سے 20 سیکنڈ تک دھونا۔ آپ جب بھی گھر آئیں یا کام پر جائیں، کھانسی کریں، کھانا کھائیں یا کھانے کو ہاتھ لگائیں تو آپ کو یہ کرنا چاہئے۔ اگر آپ فوری طور پر اپنے ہاتھ نہیں دھو سکتے تو ہینڈ سینیٹائزر استعمال کریں اور پھر اگلے موقع پر انھیں دھویں۔

رابطے میں رہنے کی کوشش کریں

تناؤ والے اوقات میں ہم دوسروں کی صحبت میں اور تعاون کے ساتھ بہتر کام کرتے ہیں۔ ٹیلیفون، ای میل یا سوشل میڈیا کے ذریعے اپنے دوستوں اور کنبے کے ساتھ رابطے میں رہنے کی کوشش کریں۔

اگرآپ اہلیت محسوس کریں تو ان کاموں پر توجہ مرکوز کرسکتے ہیں جنہیں آپ انجام دے سکتے ہوں۔

  • تناؤ کا انتظام کرنا۔
  • متحرک رہنا۔
  • متوازن غذا استعمال کرنا۔

سوشل میڈیا پر دوستوں کے ساتھ رابطے میں رہیں لیکن چیزوں کوسنسنی خیز بنانے کی کوشش نہ کریں۔ صرف قابل اعتماد ذرائع ہی سے حاصل ہونے والے مواد کو شیئر کریں اور یاد رکھیں کہ آپ کے دوست بھی پریشان ہوسکتے ہیں۔ ایسے اکاؤنٹس یا ہیش ٹیگز جن کی وجہ سے آپ پریشان ہوجاتے ہیں انہیں ساکت کرنے یا فالو نہ کرنے کے بارے میں غور کریں ۔

اپنے بچوں کے ساتھ بات چیت کریں!

چلیں ‘خوفناک موضوع’ سے گریز نہیں کرتے تاہم انہیں ایک ایسے انداز سے مصروف رکھیں جو ان کے لئے مناسب ہو۔ ہمارے پاس اپنے بچوں کے ساتھ کورونا وائرسکے پھیلاؤ کے بارے میں بات چیت کرنے سے متعلق مشورہ موجود ہے۔

پریشانی کا اندازہ لگانے کی کوشش کریں

خاص طور پر اگر آپ کو ماضی میں کوئی صدمہ یا دماغی صحت کا مسئلہ درپیش رہا ہے یا اگر آپ کو طویل مدت سے جسمانی صحت کے کسی ایسے مسئلے کا سامنا کرنا پڑا ہے جو آپ کو کورونا وائرس کے اثرات سے زیادہ دوچار کرتا ہے تو کمزور اور مغلوب محسوس کرنا معمول کی بات ہے۔

ان احساسات کو تسلیم کرنا اور ایک دوسرے کو اپنی جسمانی اور دماغی صحت کی دیکھ بھال کرنے کی یادہانی کروانا ضروری ہے لیکن اس بات سے آگاہ رہیں اور ایسی عادتوں میں اضافہ کرنے سے جو طویل مدت کے لئے مفید ثابت نہیں ہوسکتیں اجتناب کریں جیسا کہ تمباکو نوشی اور شراب نوشی۔

کوشش کریں کہ ان لوگوں کو جنہیں آپ جانتے ہوں تسلی دیں اور ایسے لوگوں کے بارے میں معلومات حاصل کریں جو اکیلے رہ رہے ہوں۔

مفروضے تیارکرنے کی کوشش نہ کریں

لوگوں پر فیصلہ مسلط نہ کریں اور فوری طور پر نتیجے پر پہنچنے سے گریز کریں کہ اس بیماری کے پھیلاؤ کا ذمہ دار کون ہے۔ کورونا وائرس صنف، نسل یا جنسی رجحان سے قطع نظر، کسی کو بھی متاثر کرسکتا ہے۔

آپ میڈیا میں پھیلاؤ کو کس طوح فالوکرتے ہیں اس امر کو دیکھیں

اس وباء کے بارے میں وسیع پیمانے پر خبروں کی کوریج موجود ہے۔ اگر آپ کو معلوم ہو کہ آپ کے لیےکوئی خبر بہت زیادہ پریشانی کا سبب ہو گی تو توازن تلاش کرنا ضروری ہے۔ بہتر یہ ہے کہ تمام خبروں سے گریز نہ کریں اور اپنے آپ کو آگاہ اور باخبر رکھیں لیکن اگر آپ پریشان ہو رہے ہوں تو خبروں کی مقدار محدود کر دیں۔

مزید مشورے اس ویب سائیٹ مینٹل ہیلتھ فاؤنڈیشن[Mental Health Foundation] پر ملاحظہ کیے جا سکتے ہیں۔

This translation was funded by Foundation Scotland and the National Emergencies Trust and distributed by the Scottish Refugee Council.