َتَک آمیز تعلقات  اور گھر پر رہنا

بدسلوکی پر مبنی تعلقات کے ساتھ زندگی بسر کرنے والے افراد کے لیے کورونا وائرس بہت سی وجوہات کی بناء پر صورتحال کوبگاڑ کر سکتا ہے۔ کورونا وائرس سے وابستہ خوف اور غیر یقینی پر مبنی صورتحال  بدسلوکی کا ارتکاب کرنے والے مجرموں کو معمول سے زیادہ  درشت، ناراض اور غیر متوقع بنا سکتی ہے لہذا گھر پر رہنے کا مطلب یہ ہوا کہ الگ تھلگ ہو کر ان کے ساتھ مزید وقت گزارنا ہو گا۔ یہ معاملہ پرسکون، دوستانہ اور زیادہ قابل احترام مقامات کی طرف کوچ کر جانے کو، جہاں پر ہم اپنے آپ کو محفوظ، زیادہ حمایت یافتہ اور مدد حاصل کرنے کے لیے بہترحالت میں محسوس کرسکتے ہوں، دشوار بنا دیتا ہے۔  

چند ایک باتیں ہر ایک کے لیے مددگار ثابت ہوتی ہیں لہذا ایک ایسے معمول پر، جو ذہنی اور جسمانی صحت کی حمایت کرتا ہو، قائم رہنے کی کوشش کریں۔  باہر جا کر چہل قدمی کرنا یا دوڑ لگانا (معاشرتی دوری کو برقرار رکھتے ہوئے) آپ کو دوسرے شخص سے دور رکھے گا لہذا آپ کو مدد حاصل کرنے کا موقع مل سکتا ہے۔ جہاں پر ممکن ہو سکے ہمیں آپ اور کسی بھی بچے کو محفوظ رکھنے کے لیےمعمول کے طریقوں پر عمل کرنا چاہیے۔  

اگر آپ کو فوری خطرہ درپیش ہو تو 999 پر پولیس یا ایمبولینس کو فون کریں۔ اگر آپ کو خطرہ  درپیش ہو اور آپ فون پر بات کرنے سے قاصر ہوں تو 999 پر فون کریں اور پھر 55 دبائیں۔ اس سے آپ کا فون متعلقہ پولیس فورس کو منتقل ہوجائے گا جو آپ کے بتائے بغیر ہی آپ کی مدد کریں گے۔  

یہ بھی مددگار ثابت ہوسکتا ہے: 

1. ان لوگوں کے ساتھ رابطے میں رہیں جن پر آپ کو اعتماد ہو 

اگرممکن ہو سکے تو قابل اعتماد لوگوں مثلاً دوستوں، کبنے کے افراد، ساتھیوں یا پڑوسیوں سے رابطے میں رہنے کے لیے ٹیکنالوجی (مثلاً  فون، ای میل یا میسجنگ ایپس) کا استعمال روزانہ بنیادوں پر (یا زیادہ کثرت سے) کریں۔  اس سے رابطے میں رہنے میں مدد ملے گی اور مجرم کو علم ہو جائے گا  کہ دیگر لوگ آپ کے حالات کے بارے میں جانتے ہیں - اور اگر ان کے ساتھ آپ کی بات نہیں ہوتی تو وہ دوسروں کو خبردار کر دیں گے۔  

2. دوسروں کا حال چال معلوم کریں 

اگر ایسا کرنا محفوظ لگتا ہو تو کچھ وقت نکال کر کمزور پڑوسیوں، کنبے کے اراکین یا ایسے دوستوں سے رابطہ کریں جو گھر سے دور ایسی جگہ پر رہتے ہوں جہاں مدد یا حمایت حاصل کرنا قدرے محفوظ لگتا ہو۔ دوسروں کے ساتھ جن سے ہم مدد مانگ سکتے ہوں جی پی فون سروس کا استعمال کرنا رابطہ کرنے کا ایک متبادل طریقہ ہوسکتا ہے۔ 

3.معلومات اور حمایت تک رسائی حاصل کریں 

آپ اسکاٹش گورنمنٹ [Scottish Government کے مشورے کے علاوہ اسکاٹش گھریلو زیادتی [Scottish Domestic Abuse]   اور جبری شادی  [[Forced Marriage  سے متعلق ہیلپ لائن 1234 027 0800  پر دن کے 24 گھنٹوں کے دوران یا اس پر  [email protected] ای میل کرسکتے ہیں۔  

آپ معلومات اور مدد کے لیے اسکاٹش ویمنز ایڈ [Scottish Women’s Aid] تک بھی رسائی حاصل کر سکتے ہیں۔ اگر آپ ویلز میں رہائش پذیر ہوں تو یہاں پر ویلش ویمنز ایڈ  [Welsh Women’s Aid] دستیاب ہے جبکہ انگلینڈ میں ویمنز ایڈ [Women’s Aid] ہاؤسنگ اور پولیس سے نمٹنے جیسے مضوعات کے بارے میں معلومات فراہم کرتی ہے۔ 

اگر ایسا کرنا محفوظ ہو تو معمول کی ذہنی صحت یا بالخصوص دشوار تعلقات کی صورت میں معاونت کے لئے ٹیلیفون ہیلپ لائن پر کال کریں۔ 

  • مہاجرین کے ذریعے چلنے والی گھریلو تشدد کے بارے میں قومی ہیلپ [National Domestic Violence] لائن پر 24/7 گھنٹے مفت فون: 247 2000 0808 
  • آمنہ ہیلپ لائن[Amina Helpline] ، پورے اسکاٹ لینڈ میں مسلمان عورتوں کے لیے - 0301 801 0808 
  • گھریلو زیادتی سے بچ جانے والے مردوں کے مشورے کے لیے [The Men's Advice Line] - 0327 801 0808 
  • برطانیہ میں موجود 25 سال سے کم عمر افراد کی معلومات اور مدد کے لیے دی مکس [The Mix] 0808  808 4994 
  • نیشنل ایل جی بی ٹی  +  گھریلو بدسلوکی [Domestic Abuse Helpline] کی ہیلپ لائن -   0800 999 5428 
  • رائیٹس فار ویمنز [Rights for Women] مشورے کی لائن، بہت سی سروسز دستیاب  ہیں۔ 

This translation was funded by Foundation Scotland and the National Emergencies Trust and distributed by the Scottish Refugee Council.